فوری رابط: ۱۹۵۱-۲۵۵۳۶۶۹۱
Mainbanner

خانقاہ جڈی بل

خانقاہ جڈی بل خانقاہ سرینگر کے علاقہ جڈی بل میں واقعہ ہے۔میر شمس الدین آراکیؒ نے ملک موسیٰ رینہ اور غازی چک کی امداد سے اس خانقاہ کی تعمیر 909ھ بمطابق 1504ءمیں شروع کی اور910ھ بمطابق 1505ءمیں مکمل کی۔یہ خانقاہ دو منزلہ تھی۔طول و عرض میں ستائیس گز اور نچلے طبقے کی بلندی کوئی دس گز تھی۔اوپر کا طبقہ آٹھ گز بلند تھااس زمانہ میں کشمیر میں ایسی وسیع اور خوبصورت خانقاہ کوئی دوسری نہ

اس خانقاہ کے دروازے پر یہ اشعار لکھے تھے۔بہ ترتیب عمارت خانقاہ نو بخشیہ مرتب شدو حسسن اہتمام مرشد دانا ولی مقتدا شیخ المشائخ میر شمس الدین  کہ روشن ساخت فیض نور بخش دیدہ دلہا  اگر خواہی کہ معلومت شود تاریخ این منزل بکن از شیخ استفسار تاریخ بنایش را۔ جب میر ؒ کا انتقال  وا تو ان کی اِسی خانقاہ کے احاطہ میں دفن کیا گیا۔اس خانقاہ کے بنانے کے 45سال بعد مرزا حیدر کاشغری نے اس کو اور اس کے ملحقہ مکانات کو جلا دیا اور ااس کی دیواریں بھی گرا دیں۔اس خانقاہ کے پتھر مرزا حیدر اندرکورٹ لے گیا۔

دولت چک958ھ/1551ئ/سے961ھ/1554ءتک سلطان اسماعیل ثانی کا وزیر رہا اور اس عرصہ میں اس کو اقتدار اعلیٰ حاصل تھا۔اس نے میرؒ کی خانقاہ پھر سے اعلیٰ طریقہ پر تعمیر کی اور میر دانیالؒ(فرزند میر شمس الدین آراکیؒ)کی لاش کو لاکر میر ؒکی قبرکے نزدیک دفن کیا۔اس کے بعد ظفر خان چک فرزند شمس چک کپواری نے کمال تعصب اور فرقہ وارانہ منافرت پھیلانے کیلئے اس خانقاہ کو994ھ/1585ءمیں جلا کر منہدم کیاجہانگیر1029ھ /1612ءمیں سیر کیلئے کشمیر آیا۔رئیس الملک ملک حیدر جاڈورہ نءاس خانقاہ کو پھر تعمیر کرنے کی اجازت بادشاہ سے حاصل کی اور ملک حیدر کے باپ ملک حسن کی کوششوں سے اس خانقاہ کی پھر تعمیر ہوئی۔چنانچہ اس کے متعلر شاعر نے کہا ہے۔

حسن ابن ملک ناجی نمود بنائے خانقاہ میرؒ یہ خانقاہ تیسری دفعہ 1132ھ/1719ءمیں میر ااحمد خان مغل صوبیدار کے عہد حکومت یں فرقہ وارانہ فسادات بھی جلائی گئی۔اس کے بعد اس کی تعمیر نہیں ہوئی

نقش

مختصر معلومات

جڈی بلسرینگر
---------------------