فوری رابط: ۱۹۵۱-۲۵۵۳۶۶۹۱
Mainbanner

آیت اللہ آغا سید محمد موسوی

آپ جناب سرکار آیت اللہ العظمیٰ آغا سید مہدی موسوی علیہ رحمہ کے فرزند ارجمند تھے اور والد کے انقال پر آپ ان کے جانشین ہوئے۔آپ نے لکھنو میں چودہ (14) سال تک والد ماجد کی زندگی اور سفر ہی تحصیل علم و کمال کیا اور اس کے بعد اپنے والد بزرگ سے مزید کسب علوم و فنون کیا۔آپ تقویٰ کے سلمان اور مسجدوں کے ابوذر تھے۔ آپ نے ایک مذہبی انجمن’’حامی الاسلام ‘‘قائم کی تھی جس کے تحت محلوں میں دینی مدرسے کھولے گئے

تھے جن میں بچوں کو قرآن کریم، نماز، اصول دین اور دیگر ابتدائی مذہبی امور کے متعلق تعلیم دی جاتی تھی۔آپ غریبوں او مسکینوں کی بہت مدد کرتے تھے۔کوئی سائل آپ کے دروازے سے خالی نہیں جاتا تھا ۔آپ مصیبت زدوں کے ہمدرد اور غریبوں کے مددگار تھے۔آپ ان خاندان کے افراد کی غمخواری کرتے تھے جو گردش زمانہ سے تنگ دستی کی زندگی بسر کرتے تھے۔ آپ نے بڈگام میں سکونت اختیار کی اور یہاں پر ایک وسیع سال1315ھ میں امام باڑہ بڈگام تعمیر کیا۔

اس امام باڑہ میں ہر سال مختلف تقاریب پر حسینی ؑ مجالس برپا ہوتی ہیں۔آپ کی تصنیف مندرجہ ذیل ہیں۔ آپ نے کشمیری زبان میں دو جلدوں پر مشتمل ایک کتاب موسوم بہ منھاج الصلاح و معراج الفلاح لکھ کر چھاپ اور عام کی۔یہ کتاب مکمل دور�ۂ فقہ اور تفسیر دین مبین پر مشتمل ہے 1343ھ میں جب آپ کی صحت اور ہمت جواب دے چکی تھی امام باڑہ دوبارہ مضبوط بنیادوں پر بنانے کی ضرورت محسووس ہوئی۔اس لئے یہ کام آپ کے خلف اکبر حضرت حجۃ السلام والمسلمین الحاج آغا سید احمد موسوی کے سپرد ہوا ۔آپ کی وفات 28ماہ شوال1350ھ بمطابق 26فروری 1932ء کو واقع ہوئی اور اپنے والد کے روضہ میں بڈگام میں مدفون ہیں۔